Home / عمومی / رات

رات

یوں لگتا ہے رات اک پڑاو ہے
اور صبح سفر کا پہلا پہر
دن چڑے قافلوں کے قافلے
اور پھر ایک اک کر کہ گھٹ رہے
لوگ اپنی اپنی دشاوں میں بٹ رہے
شام کے سائے پھر گہرے ہوتے ہیں
اور میرے ساتھ فقط دو چار لوگ بچتے ہیں
پھر یہ بھی نہیں رہتے اور رات جواں ہونے لگتی ہے
ہزاروں نہیں لاکھوں میں سے بس ایک تو باقی ہے
اور پھر تو بھی اندھیروں میں کہیں گم ہو جاتی ہے
یوں لگتا ہے رات اک پڑاو ہے
اور صبح سفر کا پہلا پہر
★★★★★
عمران خوشحال

Check Also

تعصب ہمیں کھا نہیں جائے گا کیا؟

تعصب ہمیں کھا نہیں جائے گا کیا؟

تعصب ایک ایسی ذہنی حالت ہے جس میں مبتلا انسان اپنے سے مختلف لوگوں کو …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے