Home / خیال / یکم مئی یومِ مزدور

یکم مئی یومِ مزدور

میں گرمی میں اْبلتا کھولتا ایک بنک کے اے ٹی ایم پر رُکا جہاں مجھ سے پہلے دو شخص قطار میں کھڑے اپنی باری کا انتظار کر رہے تھے جبکہ ایک شخص اے ٹی ایم مشین والے کیبن میں تھا۔ بنک بند ہونے کی وجہ سے پاس ہی بنک کے دروازے پر ایک مزدور جوتے اتارےاپنے اردگرد سےتھوڑا محتاط نیم دراز حالت میں بیٹھا ہوا تھا۔ میں نے سائے میں پہنچتے ہی بے ساختہ کہا کہ گرمی آگئی ہے۔ لائن میں کھڑا اگلا شخض اب اندر جا چکا تھا جبکہ دوسرا شخص جو حا ل حُلیے سے خاصہ تونگر لگ رہا تھا مجھ سے مخاطب ہوا ۔اتنے میں اس کی باری بھی آ گئی۔ وہ یہ کہہ کر کہ’’گرمی ہزار بیماریوں کو ختم کرتی ہے‘‘، اندر گیا۔ کچھ ہی دیر میں نوٹوں کی گھڈی کے ساتھ باہر آیا اور میری طرف  دیکھے بغیراپنی نئے ماڈل کی بڑی سی کار جس کے شیشے چڑھے تھےمیں بیٹھا اور چلا گیا۔میں مزدور کی طرف دیکھ رہا تھا اور وہ میری طرف۔ اور شایدہم دونوں کو پتا چل گیا تھا کہ اس کی کار میں اے سی مسلسل ٹھندک پہنچا رہا ہے۔

عمران خوشحال

Check Also

تعصب ہمیں کھا نہیں جائے گا کیا؟

تعصب ہمیں کھا نہیں جائے گا کیا؟

تعصب ایک ایسی ذہنی حالت ہے جس میں مبتلا انسان اپنے سے مختلف لوگوں کو …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے