ہم جو تاریک راہوں میں مارے گئے

https://youtu.be/fwcm3AtgJoQ ہم جو تاریک راہوں میں مارے گئے تیرے ہونٹوں کے پھولوں کی چاہت میں ہم دار کی خشک ٹہنی پہ وارے گئے تیرے ہاتھوں کی شمعوں کی حسرت میں ہم نیم تاریک راہوں میں مارے گئے سولیوں پر ہمارے لبوں سے پرے تیرے ہونٹوں کی لالی لپکتی رہی تیری زلفوں کی مستی برستی رہی تیرے ہاتھوں کی چاندی دمکتی رہی جب گھلی تیری راہوں میں شامِ ستم ہم چلےآئے لائے جہاں تک قدم لب پہ حرفِ غزل دل میں قندیلِ غم اپناغم تھا گواہی تیرے حُسن کی دیکھ قائم رہے اس گواہی پہ ہم ہم جو تاریک راہوں میں مارے گئے نارسائی اگر اپنی تقدیر تھی تیری اُلفت تو اپنی ہی تدبیر تھی کس کو شکوہ ہے گر شوق کے سلسلے ہجر کی قتل گاہوں سے سب جاملے قتل گاہوں سے چُن کر ہمارے علم اور نکلیں گے عشاق کے قافلے جن کی راہِ طلب سے ہمارے قدم مختصر کر چلے درد کے فاصلے کر چلے جن کی خاطر جہاں گیر ہم جاں گنوا کر تری دلبری کا بھرم ہم جو تاریک راہوں میں مارے گئے فیض احمد فیض

Read More »

مسئلہ کشمیر اور اقوامِ عالم

کشمیر میں جاری کرفیو اور قتل کا سلسلہ تاحال تھما نہیں۔ گزشتہ ماہ 9 جولائی کو وادی میں لگنے والا کرفیو 8 جولائی کے واقعے کے ممکنہ ردِعمل سے نمٹنے کا ایک طریقہ تھا۔ جب بھارتی سیکورٹی فورسسز یقینی طور پر یہ اندازہ لگانے میں ناکام رہیں کہ برہان وانی …

Read More »

منشیات سے پاک پاکستان لیکن کیسے؟

’’منشیات سے پاک پاکستان، اینٹی نارکوٹکس فورس کا مشن ہے۔ اس مشن کی تکمیل کے لئے حکومت پاکستان تین نکاتی حکمت عملی پر عمل پیرا ہے۔ منشیات کی ترسیل بند کی جائے۔ ملک سے منشیات کی مانگ ختم کی جائے۔ عالمی اداروں کے ساتھ مل کر منشیات سے پاک معاشرے …

Read More »

بھوک، نیوکس اور ابنِ خلدون!

  حال ہی میں پاک بھارت کشیدگی کے تناظر میں دونوں ممالک کے ایٹمی ہتھیاروں کے بارے بہت کچھ کہا اور سنا گیا۔ ایک اندازے کے مطابق پاکستان اور بھارت دونوں کے پاس ایک ایک سو سے زیادہ نیوکلیئر ہیڈز ہیں۔ ان نیوکلیئر ہیڈز کو عرفِ عام میں نیوکس بھی …

Read More »

تعصب ہمیں کھا نہیں جائے گا کیا؟

تعصب ہمیں کھا نہیں جائے گا کیا؟

تعصب ایک ایسی ذہنی حالت ہے جس میں مبتلا انسان اپنے سے مختلف لوگوں کو خوف اور بے یقینی کی نظر سے دیکھتا ہے، اور دوسروں کے بارے میں جانے بغیر محض ان کی ذات، رنگ، نسل، مذہب یا کسی اور شناخت کی بناء پر ان سے نفرت کرتا ہے۔ …

Read More »

نہ چاہو مجھے جاں سے زیادہ تم

نہ چاہو مجھے جاں سے زیادہ تم پر کرو تو ساتھ چلنے کا ارادہ تم میں قسم سے قسموں کا بندہ نہیں ابھی لے لو بچھڑ جانے کا وعدہ تم مجھے کیا پڑی ہے فرشتہ نظر آنے کی اور ایسا ہی کیوں اوڑھو کوئی لبادہ تم تمھارے طنز کو تعریف …

Read More »

تیری ہنسی

ذرا جو آنکھیں بند کروں تو دکھائی دیتی ہے تیری صورت سنائی دیتی ہے تیری ہنسی ہوا کے دوش پر جھومتی سرمست لہر کے جیسی یخ بستہ برفیلے موسموں میں دوپہر کے جیسی صحرائے نفرت سے اُدھر محبت کے شہر کے جیسی تیری ہنسی شبِ ظلمت کی سحر کے جیسی …

Read More »

ہجر میں مرے یا وصل میں جیے

ہجر میں مرے یا وصل میں جیے ہمی لوگ تھے جواصل میں جیے کسی نے کہا تھا مرتے دم تک جیو تیرے پہلو کی طرح مقتل میں جیے مشکلیں پڑیں کبھی نہ آساں ہونے کو ہم زندہ دل ایسے ہر مشکل میں جیے تمھارے شہر کا ہر وہ شخص میرا …

Read More »

بے یقینی

اسے یقین دلاوں میں اس کی دھوپ چھاؤں پر خود کو یقین نہیں کہ میں بھی ہوں کہیں ڈگریوں کے ڈھیر میں امید ِسحر و سویر میں گم سا ہو گیا ہوں خود سے کھو گیا ہوں میں بھی ہوں یہیں کوئی دلائے مجھے یقیں ***** عمران خوشحال

Read More »